حضرت اسماعیلؑ کے حالات زندگی

 

حضرت اسماعیلؑ جب جوان ہوئے تو جُرہم سے عربی سیکھی اور ان  لوگوں کو آپؑ اس قدر پسند آئے کہ اپنے ہی خاندان کی عورت سے آپؑ کی شادی کر دی۔ اسی دوران حضرت ہاجرہؑ کا انتقال ہو گیا۔

حضرت ابراہیمؑ کی اپنی پہلی بہو سے ملاقات کا واقعہ

  حضرت ہاجرہؑ کا انتقال  کے بعد حضرت ابراہیمؑ کو خیال آیا کہ اپنا ترکہ دیکھنا چاہیئے تو آپ مکہ تشریف لے گئے۔ لیکن حضرت اسماعیلؑ سے ملاقات نہ ہو سکی۔ بہو سے حالات کے بارے میں پوچھا تو وہ حالات کی تنگ دستی کی شکایت کرنے لگی۔ آپ نے اپنی بہو کو وصیت کی کہ جب حضرت اسماعیلؑ آئیں تو انہیں کہنا کہ اپنے دروازے کی چوکھٹ بدل لیں۔  اس وصیت کا مطلب حضرت اسماعیلؑ سمجھ گئے اور اپنی پہلی بیوی کو طلاق دے کر ایک دوسری نیک عورت سے شادی کر لی۔ وہ جُرہم کے سردار مضاض بن عمرو کی صاھب زادی تھیں۔

حضرت ابراہیمؑ کی اپنی دوسری بہو سے ملاقات کا واقعہ

حضرت اسماعیلؑ کی  دوسری شادی کے بعدجب حضرت ابراہیمؑ دوبارہ مکہ تشریف لائے اور اپنی دوسری بہو سے حالات دریافت کئے تو اس نے کسی بھی تنگ دستی کا اظہار نہ کیااور اللہ کی حمد و ثنا بیان کی حضرت ابراہیمؑ یہ سن کر بہت خوش ہوئے اور آپ نے وصیت کی کہ حضرت اسماعیلؑ اپنی چوکھٹ برقرار رکھیں اور فلسطین واپس چلے گئے۔ 

حضرت ابراہیمؑ کی اپنے بیٹے حضرت اسماعیلؑ سے ملاقات

دوسری بہو سے ملاقات کرنے کے بعد جب دوبارہ تشریف لائے تو حضرت اسماعیلؑ زم زم کے قریب ایک درخت کے نیچے ایک تیر گحڑ رہے تھے۔ اور ایک دوسرے کو دیکھتے ہی بے تابی سے آگے بڑھے اور بہت محبت سے انہیں اپنے سینے سے لگایا۔ ان کی ملاقات ایک لمبی جدائی کے بعد ہوئی تھی اور ایک نرم دل باپ اور اطاعت شعار بیٹے کا ایک دوسرے سے دور رہنا بہت کٹھن ثابت ہوا تھا۔

خانہ کعبہ کی تعمیر

ملاقات کے بعد دونوں نے مل کر خانہ کعبہ کی تعمیر شروع کی اور بنیاد کھود کر دیواریں اٹھائیں۔ اور پھر حضرت ابراہیمؑ نے ساری دنیا کے مسلمانوں کو حج کے لئے آواز دی۔

Old Picture of Khana Kaba

 

Leave a Comment

Translate »